Post is pinned.Post has attachment
صبح بخیر زندگی
اسلام عليكم ورحمة اللة وبركاته
Photo

Post has shared content
Hahaha hahaha.
Girls dekhlo

Post has attachment
Photo

Post has attachment
کہنے لگے کیا چل رہا ہے آج کل
میں نے کہا صرف سانسیں...!
Photo

Post has attachment
تڑپ اٹھوں بھی تو ظالم تری دہائی نہ دوں
میں زخم زخم ہوں پھر بھی تجھے دکھائی نہ دوں

ترے بدن میں دھڑکنے لگا ہوں دل کی طرح
یہ اور بات کہ اب بھی تجھے سنائی نہ دوں

خود اپنے آپ کو پرکھا تو یہ ندامت ہے
کہ اب کبھی اسے الزامِ نارسائی نہ دوں

مری بقا ہی مری خواہشِ گناہ میں ہے
میں زندگی کو کبھی زہرِ پارسائی نہ دوں

جو ٹھن گئی ہے تو یاری پہ حرف کیوں آئے
حریفِ جاں کو کبھی طعنِ آشنائی نہ دوں

مجھے بھی ڈھونڈ کبھی محوِ آئینہ داری
میں تیرا عکس ہوں لیکن تجھے دکھائی نہ دوں

یہ حوصلہ بھی بڑی بات ہے شکست کے بعد
کہ دوسروں کو تو الزامِ نارسائی نہ دوں

فراز دولتِ دل ہے متاعِ محرومی
میں جامِ جم کے عوض کاسۂ گدائی نہ دوں
Photo

Post has attachment
کہ زندگی تری زلفوں کی نرم چھاوں میں
گزرنے پاتی تو شاداب ہو بھی سکتی تھی

یہ تیرگی جو مری زیست کا مقدر ہے
تری نظر کی شعاعوں میں کھو بھی سکتی تھی

عجب نہ تھا کہ میں بے گانہء الم ہو کر
ترے جمال کی رعنائیوں میں کھو رہتا

ترا گداز بدن، تیری نیم باز آنکھیں
انہیں حسین فسانوں میں محو ہو رہتا

پکارتیں مجھے جب تلخیاں زمانے کی
ترے لبوں سے حلاوت کے گھونٹ پی لیتا

حیات چیختی پھرتی برہنہ سر اور میں
گھنیری زلفوں کے سائے میں چھپ کے جی لیتا

مگر یہ ہو نہ سکا اور اب یہ عالم ہے
کہ تو نہیں ترا غم، تری جستجو بھی نہیں

گزر رہی ہے کچھ اس طرح زندگی جیسے
اسے کسی کے سہارے کی آرزو بھی نہیں

زمانے بھر کے دکھوں کو لگا چکا ہوں گلے
گزر رہا ہوں کچھ انجانی رہ گزاروں سے

مہیب سائے مری سمت بڑھتے آتے ہیں
حیات و موت کے پرہول خارزاروں میں

نہ کوئی جادہء منزل نہ روشنی کا سراغ
بھٹک رہی ہے خلاوں میں زندگی میری

انہی خلاوں میں رہ جاوں گا کبھی کھو کر
میں جانتا ہوں کہ مری ہم نفس مگر یونہی

کبھی کبھی مرے دل میں خیال آتا ہے

ساحر لدھیانوی
Photo

Post has attachment
😂😂😂😂😂😂😂😂
Photo

Post has attachment
Photo

Post has attachment
جہیڑی عشق دی کھیڈ رچائی اے
اے میری سمجھ نا آئی اے

ویکھن نوں لگد ا سادا اے
اے عشق بڑا ای ڈھڈا اے

اے ڈھڈا عشق نچا دیوے
پیراں وچ چھالے پا دیوے

عرشاں دی سیر کر دیوے
اے رب دے نال ملا دیوے

چُپ رہ کے بندہ تَر جاندا
جے بولے سولی چڑھ جاندا

جہیڑا عشق سمندر ور جاندا
او جنیدا وسدا مر جاندا

ایس عشق توں کوئی وی بچیا نئیں
پر ہر اک وچ اے رچیا نئیں

ایس عشق سے کھیڈ نرالے نئیں
فقیراں ناں ایدے پالے نئیں

اے راتاں نوں جگا دیندا
اکھیاں وچ جھریاں لا دیندا

اے ہجر دی اگ وچ ساڑ دیندا
اے بندہ اندروں مار دیندا

ویکھن نوں لگدا سادا اے
پر عشق بڑا ای ڈھڈا اے۔۔

Photo

Post has attachment
Wait while more posts are being loaded