Post has shared content
پیا مورا جیا ناہی لاگے
اٹک گییؤ تیرے سنگ
موری چنری پے ھیں داغ بہت
موہے اپنے رنگ میں دیجیؤ رنگ
مورا جیون ھے اک راہء خار
موہے رکھیؤ اپنے سنگ سنگ

تن من مورا وانگ تنداں دے
موہے جیون کا نہی رنگ ڈھنگ
پیا
سنیؤ جلنے لاگی ھے پریت کی ڈوری
ناچن لاگے مورا انگ انگ

مورا جیون ھے اک راہء خار

موہے رکھیؤ اپنے سنگ سنگ
پیا مورا جیا ناہی لاگے
اٹک گییؤ تیرے سنگ
موری چنری پے ھیں داغ بہت
موہے اپنے رنگ میں دیجیؤ رنگ
مورا جیون ھے اک راہء خار
موہے رکھیؤ اپنے سنگ سنگ

تن من مورا وانگ تنداں دے
موہے جیون کا نہی رنگ ڈھنگ
پیا
سنیؤ جلنے لاگی ھے پریت کی ڈوری
ناچن لاگے مورا انگ انگ

مورا جیون ھے اک راہء خار

موہے رکھیؤ اپنے سنگ سنگ
Photo



تم اگر ہم سے بچھڑنے میں نہ عُجلَت کرتے
ہم عبادت کی طرح تُم سے محبّت کرتے

میں نے پوچھا تھا فقط تم سے تغافل کا سبب
بھگی آنکھوں سے سہی کچھ تو وضاحت کرتے

اُن کو دعویٰ تھا مُحبّت میں جُنوں کاری کا
ہم سے وہ کیسے خسارے کی تجارَت کرتے

دُکھ کا ہر رُوپ بہر حَال ہمارا ہوتا
ہم جو تقسیم کبھی دل کی وراثت کرتے

فیصلہ اُس نے کِیا ترک ِ مرَاسِم کا مگر
زندگی بیت گئی میری وضاحَت کرتے

Post has attachment
Hi
Photo

Post has attachment

حساب کر لو
گئے دنوں کا ،گئی رتوں کا حساب کر لو
اک ایک پل کا ،اک ایک ساعت کا
دھڑکنوں کا
ہنسی کا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ خوشیوں کا
مسکراہٹ کا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ قہقہوں کا
حسین راتوں کا ۔۔۔۔لمبی باتوں کا
محفلوں کا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حساب کر لو
غموں کی بارش ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ پہاڑ راتوں کا
وحشتوں کا
ابلتے اشکوں کا ۔۔۔۔۔۔ رت جگوں کا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اگر خوشی کا کوئی دقیقہ بھی میری جانب ادھار نکلے
تو میری آنکھوں کے دونوں کیسوں میں
آنسوؤں کے ہزاروں سکے پڑے ہوئے ہیں
فگار سینے کے زخم سلنے کے باوجود ان کے بعض ٹانکے کھلے ہوئے ہیں
وہ ایک بھانبھڑ جو بجھ چکا تھا ۔۔۔۔۔۔۔۔بجھا نہیں ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سلگ رہا ہے
ابھی بھی وحشت دبی ہوئی ہے
یہ ساری پونجی تمھاری خاطر بچی ہوئی ہے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
حساب کر لو
میں سارا قرضہ اتار دوں گا
Wait while more posts are being loaded