Post has attachment
Photo

ہمارا بچپن اس تیز رفتار ٹرین کی طرح ہماری زندگیوں سے گزر جاتا ہے جو ایک سنسان اور اجڑے سٹیشن سے صرف ہارن دیتے گزر جاتی ہے

Post has attachment
بسا سکو تو بسا لو مجھے خیالوں میں
کہ اس دیار میں دوبارہ میں نہ آؤں گا
Photo

Post has attachment
ﺁﭖ , ﮨﯿﺮﺍ ،ﺻﺪﻑ ، ﻧﮕﯿﮟ ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟
ﺁﭖ ﺑﮯ ﺍﻧﺘﮩﺎ ﺣﺴﯿﮟ ، ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟

ﺁﭖ ﮐﮯ ﮐﺎﮐﻠﻮﮞ ﮐﮯ ﺟﻨﮕﻞ ﻣﯿﮟ
ﺍﺗﻨﯽ ﻣﻮﺳﯿﻘﯿﺎﮞ ، ﻣﮑﯿﮟ ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟

ﭼﺎﻧﺪ ﺧﻮﺩ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺳﻤﺠﮫ ﭘﺎﯾﺎ
ﺁﭖ ﺍﺱ ﺩﺭﺟﮧ ﻣﮧ ﺟﺒﯿﮟ ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟

ﺷﻤﺲ ﺣﯿﺮﺍﮞ ﮬﮯ، ﺁﭖ ﮐﮯ ﻋﺎﺭﺽ
ﭘﮭﻮﻝ ﮬﻮ ﮐﺮ ﺑﮭﯽ ، ﺁﺗﺸﯿﮟ ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟

ﺁﭖ ﺍﺗﻨﮯ ﺩﺭﻭﻍ ﮔﻮ ﮬﻮ ﮐﺮ
ﺍﺱ ﻗﺪﺭ ﻗﺎﺑﻞ _ ﯾﻘﯿﮟ ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟

ﺷﺎﻋﺮﻭﮞ ﮐﮯ ﺩﻟﻮﮞ ﭘﮧ ﺁﭖ ﭼﻠﯿﮟ
ﮔﺎﻣﺰﻥ ، ﺑﺮﺳﺮ _ ﺯﻣﯿﮟ ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟

ﺟﺘﻨﮯ ﺑﮯ ﺭﺣﻢ ﺩﻟﺮﺑﺎ ﮬﯿﮟ ﻋﺪﻡ
ﺍﺗﻨﮯ ﻣﺤﺒﻮﺏ ﺩﻟﻨﺸﯿﮟ ﮐﯿﻮﮞ ﮬﯿﮟ.؟

ﻋﺒﺪﺍﻟﺤﻤﯿﺪ ﻋﺪﻡ
Photo

Post has attachment
ھم کہ ٹھہرے اجنبی اتنی مداراتوں کے بعد
پھر بنیں گے آشنا کتنی ملاقاتوں کے بعد

کب نظر میں آئے گی ھے داغ سبزے کی بہار
خون کے دھبے دھلیں گے کتنی برساتوں کے بعد

تھے بہت بے درد لمحے ختمِ درد عشق کے
تھیں بہت بے مہر صبحیں مہرباں راتوں کے بعد

دل تو چاہا پر شکستِ دل نے مہلت ہی نہ دی
کچھ گلے شکوے بھی کر لیتے مناجاتوں کے بعد

ان سے جو کہنے گئے تھے فیض جاں صدقہ کیئے
ان کہی ہی رہ گئی وہ بات سب باتوں کے بعد
Photo

Post has attachment
Photo

Post has attachment
Photo

Post has attachment
Photo

Post has attachment
Photo

Post has attachment
Photo
Wait while more posts are being loaded