Post has attachment

Post has shared content
اے مصور میرے محبوب کی ،،،تصویر بنا
تجھ سے بن جائے تو بگڑی ہوئی تقدیر بنا
زلف ایسی ہو کے برسات بھی پانی مانگے
سرخ ہونٹوں سے ہر اک پھول جوانی مانگے
نرگسی آنکھوں میں کاجل کے وہی تیر بنا
اے مصور میرے محبوب کی ،،،تصویر بنا
میں تجھے حسن کے انداز سکھاؤں کیسے
اپنی آنکھیں تیرے چہرے پہ لگاؤں کیسے
تیرا در چھوڑ کر،،، جاؤں تو جاؤں کیسے
جس میں الجھا رہوں دن رات وہ زنجیر بنا
اے مصور میرے محبوب کی تصویر بنا....
" GreeN EyeZ "
Photo

Post has attachment

Post has shared content
#آپ-نماز-کیوں-پڑھتے-ہیں،؟

یہ سوال میری لائف کا بہت مشکل سوال ثابت ہوا ،
فرض ہے ؟ ،
شکر ادا کرنے کے لئے ؟
خدا ہے ہی اس قابل ؟
جہنم کے خوف سے ؟ یہ وہ جواب ہیں جو مجھے اس کے جواب میں ملتے ،
ایک ٹائم تھا جب میں نماز جہنم کے خوف سے پڑھتے تھے ،
جہنم کا خوف مجھے اٹھا کے نماز کے لئے جا کھڑا کرتا تھا ،
پر مجھے وہ نماز فرض کی ادائیگی کبھی بھی نہ لگ سکی ،
پھر مجھ سے نماز نہ تو آرام سے پڑھی جاتی تھی ، اور نہ یکسوئی سے ،
پھر خوف بھی کم ہوتا گیا ،
پھر جنّت کا بیان پڑھا تو اس کو پا لینے کی چاہ جاگی ،
میں پھر سے نماز پڑھنے لگا ،
مگر یہ بھی چند دن ہی رہی کیفیت ،
اپنے ابّا جی سے کہا تو بولے ،
بیٹا اس نے دنیا کی ھر نعمت سے نوازا ہے تم اس رشتوں شکر ادا کرنے کے لئے پڑھا کرو ،
ذہن میں یہ رکھ کی بھی نماز پڑھ لی ،،
دل کی حالت اب بھی وہی تھی ،،
پھر ایک دن بہت عجیب بات ہوئی ،
میں جائے نماز پے کھڑا ، اور مجھے نماز بھول گئی ،
بہت یاد کرنے کی کوشش کی ،
بھلا نماز ہم کیسےبھول سکتےہیں ؟
مجھے خود پے بہت رونا آیا ،
اور میں وہیں بیٹھ کے رونے لگا ،
تو مجھے لگا کوئی تسلی دینے والا ہاتھ ہے میرے سر پے ،،جیسے بچہ رو رہا ہو توہم سر پے ہاتھ رکھکے دلاسا دیتے ہیں ،
مجھے لگا کوئی پوچھ رہا ہے ، کے کیا ہوا ، میں نے کہا نماز بھول چکا ہوں ،،
تو جیسے پوچھا گیا ،،، تو ؟
میں حیران پریشان ،، اس تو کا جواب تو مرے پاس بھی نہیں تھا شائد ،،
پھر لگا کوئی مسکرا یا ہو ،، اور کہا ہو ،
نماز کیوں پڑھتے ہو ، ؟
خوف سے ؟
پر وہ تو غفور ہے ، رحیم ہے ، پھر خوف کیسا ؟
جنّت کے واسطے ؟ پر وہ تو درگزر فرماتا ہے ،،
شکر ادا کرنا ہے ؟ اسےضرورت نہیں ،،،،
فرض ہے؟ تو زمین پے سر ٹکرانے کو نماز نہیں کہا جاتا ،
وہ اس قابل ہے ؟ تم کیا جانو وہ کس قابل ہے ،،،،
میرے پاس الفاظ ختم، میں بس اس آواز میں گم ،،،،،
وہ جو ہے نہ ،،،
وہ تم سے کلام چاہتا ہے ،
تم اسی کو دوست مانو ، اسی سے مشورہ کرو ،
اسی کو داستان سناؤ ،،،
جیسے اپنے دوست کو سناتے ہو ، دل کی بیقراری کم ہوگی ،
پھر نماز میں سکون ملے گا ،،،،،
میری آنکھ کھلی تو میں وہیں پے تھا ، وہ یقیناً خواب تھا ،
میں دوبارہ سے وضو کر کے کھڑا ہوا ،
نماز خود بخود ادا ہوتی چلی گئی ،،،،،
دل میں سکون آتا چلا گیا ،
مگر میرا دل سجدے سے سر اٹھانے کو نہ کرے ، مجھے لگا میرے پاس ہے وہ ، مجھ سے بات کر رہا ہے ،
پھر اپنے دل کی ساری باتیں ہوتی چلی گیئں ،،
گرہیں کھلتی گیئں ،
سکون ملتا گیا ،،،
آسانیاں ہوتی گیئں ،،،
پھر آنکھ اذان سے پہلے اٹھتی ،
محبوب سے ملاقات کا انتظار رہنے لگا ،
فرض کے ساتھ نفلی نمازیں بھی ادا ہوتی گیئں ،
اللّه کا کرم ہو گیا ،
Photo

Post has shared content
اسلام علیڪم ورحمۃ اللّٰہ وبرکاتہ

جہاں جہاں آج عید ہے ان سب کو بھی میری طرف سے عید مبارک

باقی سب کو ایڈوانس عید مبارک
Photo

Post has attachment

Post has attachment
میں عورت ذات ہوں،
کمزور و کم تر سہی،
کہ مجھے زیب نہیں دیتا
تیرے آگے اکڑنا، ______
تو تو آدم ہے،______
کہ ابن آدم ہے
جو اعلی تخلیق کہلایا
جسے فرشتوں نے پوجا
مگر یہ کہاں لکھا ہے
تو مجھ سے معتبر ہے
میں بھی تو تیرا ہی حصہ ہوں
تیری پسلی سے نکلی ہوں
گر تو مکمل ہوتا،
گر تو ہی سب کچھ ہوتا
تو رہ لیتا خود اکیلا،
خدا میری تخلیق کیوں کرتا؟ ‏
میں بھی تو کچھ ہوں
کچھ نہیں بہت کچھ ہوں،
حوا ہوں____________
کہ بنت حوا ہوں____
جو تیری پاسباں بنی،
تیرا سائباں بنی،
تیرا زار کہلائی،
تیری ہمراز کہلائی______
تو یہ کیسے ممکن ہے؟
بھلا کیونکر ممکن ہے؟
میں کم تر کہلاؤں،
کبھی اپنے وجود کا بھی کوئی حصہ کم تر ہوسکتا ہے؟ ‏________ بھلا چاند اور سورج میں کوئی بدتر ہوسکتا ہے؟ میں لاکھ نازک و کمزور سہی،
مگر میں تجھ سی ہی ہوں،
انا مجھ میں بھی رکھی ہے،
بلا کی رکھی ہے،.______
کچھ مان میرا بھی ہے،
خودار میں بھی ہوں،
بلا کی ہوں،
بے مول ہوکر جھک نہیں سکتی،
تیری انا سے مٹ نہیں سکتی،
تو بھی تو میرے جیسا ہے.
میرا کمزور وجود بھی تیرے وجود کا حصہ ہے
Photo

Post has shared content
چلے_گئے_تو_پکارے_گی_ہر_زباں_ہم_کو....!!!
"
نجانے_کتنی_زبانوں_سے_بیاں_ہوں_گے_ہم...!!!!
Photo

Post has shared content
This summer we can help the birds this way also, without spending money.
Photo

Post has shared content
میری ماں مجھ سے اکثر پوچھتی تھی کہ “بتاؤ جسم کا اہم ترین حصہ کونسا ہے؟”
میں سال ہا سال اس کے مختلف جواب یہ سوچ کر دیتا رہا کہ شاید اب کے میں صحیح جواب تک پہنچ گیا ہوں-
جب میں چھوٹا تھا تو میرا خیال تھا کہ آواز ہمارے لیۓ بہت ضروری ہے، لہذا میں نے کہا ” امی! میرے کان”
انہوں نے کہا “نہیں- دنیا میں بہت سے لوگ بہرے ہیں- تم مزید سوچو میں تم سے پھر پوچھوں گی-”
بہت سے سال گزرنے کے بعد انہوں نے پھر پوچھا۔۔
میں نے پہلے سے زیادہ ذہن پر زور دیا اور بتایا کہ “امی۔۔ نظر ہر ایک کے لیۓ بہت ضروری ہے لہذا اس کا جواب آنکھیں ہونا چاہیۓ”
انہوں نے میری طرف دیکھا اور کہا “تم تیزی سے سیکھ رہے ہو، لیکن یہ جواب صحیح نہیں ہے کیونکہ دنیا میں بہت سے لوگ اندھے ہیں”
پھر ناکامی ہوئی اور میں مزید علم کی تلاش میں مگن ہو گیا- اور پھر بہت سے سال گزرنے کے بعد میری ماں نے کچھ اور دفعہ یہی سوال دہرایا اور ہمیشہ کہ طرح ان کا جواب یہی تھا کہ “نہیں- لیکن تم دن بدن ہوشیار ہوتے جا رہے ہو-”
پھر ایک سال میرے دادا وفات پا گئے- ہر کوئی غمزدہ تھا- ہر کوئی رو رہا تھا- یہاں تک کہ میرے والد بھی روئے- یہ مجھے خاص طور پر اس لیۓ یاد ہے کہ میں نے کبھی انھیں روتے نہیں دیکھا تھا-
جب جنازہ لے جانے کا وقت ہوا تو میری ماں نے پوچھا “کیا تم جانتے ہو کہ جسم کا سب سے اہم حصہ کونسا ہے-”
مجھے بہت تعجب ہوا کہ اس موقع پر یہ سوال۔۔ میں تو ہمیشہ یہی سمجھتا تھا کہ یہ میرے اور میری ماں کے درمیان ایک کھیل ہے-
انہوں نے میرے چہرے پر عیاں الجھن کو پڑھ لیا اور کہا۔۔۔ “یہ بہت اہم سوال ہے- یہ ظاہر کرتا ہے کہ تم اپنی زندگی میں کھوۓ ہوئے ہو- ہر وہ جواب جو تم نے مجھے دیا وہ غلط تھا اور اس کی وجہ بھی میں نے تمہیں بتائی کہ کیوں- لیکن آج وہ دن ہے جب تمہیں یہ اہم سبق سیکھنا ہے”
انہوں نے ایک ماں کی نظر سے مجھے دیکھا اور میں نے ان کی آنسوؤں سے بھری آنکھیں دیکھیں- انہوں نے کہا “بیٹا ۔۔۔۔ جسم کا اہم ترین حصہ کندھے ہیں-”
میں نے پوچھا “کیا اس کی وجہ یہ ہے کہ انہوں نے میرے سر کو اٹھا رکھا ہے؟”
انہوں نے کہا کہ “نہیں، اس کی وجہ یہ ہے کہ جب آپ کا کوئی پیارا کسی تکلیف میں رو رہا ہو تو یہ اس کے سر کو سہارہ دے سکتے ہیں- ہر کسی کو زندگی میں کبھی نہ کبھی ان کندھوں کے سہارے کی ضرورت ہوتی ہے- میں صرف یہ امید اور دعا کر سکتی ہوں کہ تمہاری زندگی میں بھی وہ پیارے اور مخلص لوگ ہوں، کہ ضرورت پڑنے پر جن کے کندھے پر تم سر رکھ کر رو سکو-
یہ وہ وقت تھا کہ جب میں نے سیکھا کہ جسم کا اہم ترین حصہ خودغرض نہیں ہو سکتا- یہ دوسروں کے لیۓ بنا ہے- یہ دوسروں کے دکھ درد کا ساتھی اور ہمدرد ہے-
میرے بھائیوں اور بہنوں !!
لوگ یہ بھول جاتے ہیں کہ آپ نے کیا کہا؟؟؟
لوگ یہ بھی بھول جاتے ہیں کہ آپ نے کیا کیا؟؟؟
لیکن لوگ یہ کبھی نہیں بھول سکتے کہ آپ نے انھیں کیسا محسوس کرایا ؟؟
کیا آپ نے کبھی ان کے دکھ کو محسوس کیا ؟؟
کبھی ان کے بہتے آنسو پونچھے ہیں ؟؟
Photo
Wait while more posts are being loaded