Profile

Cover photo
Anam Noor
29,173 followers|14,736,679 views
AboutPostsPhotosVideos

Stream

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 
Roza Iftaar Karne Ki Sahih Aur Masnoon Duaa:
109
11
zain alon's profile photoTalha Sheraz's profile photoNiaz Khan Jadoon's profile photom. Qasim's profile photo
6 comments
 
ذَهَبَ الظَّمَأُ وَابْتَلَّتِ الْعُرُوْقُ وَثَبَتَ اْلأَجْرُ إِنْ شَاءَ اللهُ.

‘The thirst has gone and the veins are moistened, and reward is confirmed, if Allaah wills.’


 ·  Translate
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 
O Allah! Let not our hearts swerve [from the Truth] after Thou hast guided us; and bestow upon us Thy mercy, indeed Thou alone art the Bestower
(Al 'Imran 3: 8 )

 O Allah, please forgive us of our sins, guide us to the straight path, and allow us to lower our heart (and our gaze) in modesty.
O Allah, please save us from the punishment of the grave and the Hell-Fire. Ameen.
75
1
mohd.nasir.Ahmad New Delhi.from. khan market's profile photoAmjad Khan's profile photomuhammad sajjad's profile photoIrum Anees's profile photo
5 comments
 
AMeen ya RAB
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 

Oh Allah, I know I have sinned, over and over again, and in Your mercy, I ask for your forgiveness. And give me the strength to fix my mistakes, to always be vigilant so I don’t make the same mistakes, and I ask for your guidance so that I can be the best I can be.
#islam  
56
asif karim's profile photomohd.nasir.Ahmad New Delhi.from. khan market's profile photo
2 comments
 
Subhan Allah
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 

"Every soul shall have a taste of death: And only on the Day of Judgment shall you be paid your full recompense. Only he who is saved far from the Fire and admitted to the Garden will have attained the object (of Life): For the life of this world is but goods and chattels of deception."
(Qur'an 3:185)
#islam  
44
intsar ahmad's profile photoRyad Arlan's profile photo
2 comments
 
No but you confuse him.
Piss off the angel of death so much when you are young he wont ever want to see you again. Taunt him, Look for him and ask him to hang out.
NOW? What about NOW?
NO GO AWAY.
Oh there you are why are you running from me?
Go away kid I dont want your soul right now.
Its a donation.
NOOOOOOO

Headlines:
Angel of death in psyche ward suffering nervous twitches, blank stares, and hearing voices.
"Well we found him hiding pale and shaking behind a dumpster and kept repeating "That kid, that damned kid, go away, leave me alone, go away.""
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 
:: Change for better ! ::
Most people who changed and became better people never thought they would ever witness such a transition in their lives.
You can change.
...
You can become a better person; even if you can’t imagine it.
When your heart is slightly touched every time you read such posts, that deep feeling is called a potential spark. This spark means that there is good in you.

Recognizing this small spark of potential which you own, is the the first step to changing your life.
The second step is admitting that you need to change..
57
5
Hamza Ashraf's profile photosima rohani's profile photoJaware Love's profile photozuha qadir's profile photo
4 comments
 
Correctly
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 
1-تقویٰ کا حصول اور تقویٰ کے ثمرات

روزوں کا سب سے بڑا فائدہ تقوی کا حصول ہے، جو خود اللہ تعالیٰ نے بیان فرمایا ہے

﴿لَعَلَّکُمْ تَتَّقُوْن﴾
(البقرة: ۱۸۳/۲)

’’تم پر روزہ رکھنا اس لیے فرض کیا گیا ہے تاکہ تم متقی بن جاؤ ۔‘‘

کیونکہ روزہ بھی عبادت ہی ہے اور عبادت کا مقصد اور فائدہ بھی اللہ تعالیٰ نے تقویٰ کا حصول ہی بتلایا ہے۔

(دیکھئے سورة البقرة: ۲۱/۲)

یہ تقویٰ کیا ہے جو روزوں سے انسان کے اندر پیدا ہوتا ہے؟
اور وہ روزے سے پیدا کس طرح ہوتا ہے؟
اور تقویٰ سے کیا فوائد و ثمرات حاصل ہوتے ہیں؟
یہ تین سوال قابل غور ہیں۔

1- تقویٰ کا مطلب ،

دل میں اللہ تعالیٰ کی عظمت و جلالت کا اس طرح راسخ ہو جانا ہے کہ انسان اس کی نا فرمانی کے ارتکاب سے باز رہے۔ ہر قدم سوچ کر اٹھائے اور زندگی کے ہر موڑ پر اور ہر معاملے میں اس کی ہدایات و تعلیمات کی پابندی کرے، اسے بعض بزرگوں نے اس مثال سے واضح کیا ہے کہ ایک شخص ایسی تنگ گزر گاہ سے گزرے جس کے دونوں طرف کانٹے ہوں، تو وہ ایسی گزر گاہ سے کپڑے سنبھال کر اور دامن سمیٹ کر چلے گا تاکہ اس کا دامن کانٹوں سے نہ الجھے۔ تقویٰ بھی اسی احتیاط اور معصیت سے دامن بچا کر زندگی گزارنے کا نام ہے۔

2- اور یہ تقویٰ روزہ سے اس طرح پیدا ہوتا ہے کہ روزے کی حالت میں ایک مومن نہ کھاتا ہے نہ کچھ پیتا ہے اور نہ بیوی سے اپنی جنسی خواہش پوری کرتا ہے، حالانکہ عام حالات میں اس کے لیے ان میں سے کوئی چیز بھی ممنوع اور حرام نہیں ہے۔ کھانا پینا بھی حلال امر ہے اور بیوی سے مباشرت بھی جائز کام ہے۔ لیکن ایک مومن روزے میں یہ حلال کام بھی نہیں کرتا، حتی کہ گھر کی چار دیواری کے اندر بھی نہیں کرتا جہاں اسے کوئی دیکھنے یا روکنے والا نہیں ہوتا۔ یہ کیا ہے؟ یہ وہی تقویٰ ، اللہ کا ڈر ہے جو روزے سے اس کے اندر پیدا ہوا ہے۔

جب ایک مومن اللہ تعالیٰ کے ڈر سے محض اس لیے حلال کام بھی نہیں کرتا کہ روزے میں اللہ تعالیٰ نے ان سے روک دیا ہے اور کسی کے نہ دیکھنے کے باوجود وہ باز رہتا ہے، تو گویا روزے نے اس کے اندر وہ تقویٰ پیدا کر دیا ہے جو روزے کا اصل مقصد ہے۔ اگر انسان اس ماہانہ مشق کو اپنے احساس و شعور کا حصہ بنا لے تو یقیناً اللہ تعالیٰ کا یہ خوف قدم قدم پر اس کے دامن گیر رہ سکتا ہے اور اسے ہر وقت اللہ تعالیٰ کی نا فرمانی سے باز رکھ سکتا ہے۔ جب وہ اللہ کے حکم پر، اللہ تعالیٰ کے ڈر سے ، جائز اور حلال کاموں سے بھی وقتی طور پر رکا رہتا ہے تو جن چیزوں اور کاموں کو اللہ نے ہمیشہ کے لیے حرام اور ناجائز قرار دیا ہے، ایک مومن اور ایک متقی ان کا ارتکاب کس طرح کر سکتاہے؟

ایک مومن کے اندر جب یہ تقویٰ اور اللہ کا ڈر پیدا ہو جاتا ہے
اسے حسب ذیل ثمرات و فوائد حاصل ہوتے ہیں

تقویٰ کے ثمرات و فوائد :

1- ایک مومن کی ایمانی قوت میں اضافہ اور اللہ تعالیٰ کی عظمت و جلالت کا نقش اس کے دل میں مزید گہرا ہو جاتا ہے۔ وہ اس کی اطاعت و فرماں برداری میں راحت اور اطمینان محسوس کرتا اور نافرمانی میں اس کی گرفت سے ڈرتا ہے۔

2- اس کے عقیدہ آخرت میں تازگی اور پختگی آجاتی ہے۔ وہ روزے میں اپنی لذتیں قربان اور خواہشیں ترک کرتا ہے تو ایسا وہ اس یقین کی بنیاد پر کتا ہے کہ اس کے بدلے میں اللہ تعالیٰ اسے آخرت میں اس سے زیادہ لذتوں والی چیزیں عطا فرمائے گا۔ یہ عقیدہٴ آخرت اور حسن صلہ کا یہ تصور روزے کی مشکلات اور مشقتوں ہی کو اس کے لیے آسان نہیں کرتا بلکہ دین و شریعت کے ہر معاملے میں اس کے اندر صبر و ثبات کی خوبیاں پیدا کرتا ہے جو اس دین پر قائم رکھتی ہے، اور اللہ تعالیٰ کے حکم سے انحراف نہیں کرنے دیتیں۔

3- جب ایک مومن اللہ تعالیٰ کے حکم سے روزے میں ایک خاص وقت (صبح صادق کے ہو جانے) پر کھانے پینے اور دیگر خواہشات سے رک جاتا ہے اور ایک دوسرے وقت پر (سورج کے غروب ہوتے ہی )کھنا پینا شروع کر دیتا ہے اور دوسری جائز خواہشات بھی پوری کرنی چاہتا ہے تو کر لیتا ہے۔ تو شب و روز کے لمحات و اوقات میں اللہ تعالیٰ کی یہ فرماں برداری اس کے اندر اللہ تعالیٰ کی عبودیت و بندگی اور اس کے سامنے سرا فگندگی و خود سپردگی کا جذبہ و شعور پیدا کرتی ہے کہ انسان کا اپنا کچھ نہیں ہے، سب کچھ اللہ ہی کا ہے اور اللہ ہی کے لیے ہےایک ایک لمحے اور ایک ایک گھڑی کو اللہ تعالیٰ ہی کی راہ میں یا اس کی مرضی و منشا کے مطابق ہی گزارنا ہے۔ اسی کا نام کمال عبودیت اور کمال بندگی ہے جو انسان سے مطلوب ہے۔

4- اور جب بندگی کا یہ شعور اور ہر لمحے اور ہر گھڑی اللہ تعالیٰ کی اطاعت و فرماں برداری کا یہ جذبہ عام ہو جاتا ہے تو پھر پورا معاشرہ اللہ تعالیٰ کے رنگ میں رنگ جاتا اور پورا ماحول ایمان کے نور سے منور ہو جاتا ہے، پھر کفر و شرک (یعنی غیروں کا رنگ) وہاں سے مٹ جاتا اور معصیت و نا فرمانی کی تاریکیاں کافور ہو جاتی ہیں۔ ہر طرف ’’صِبْغَةُ اللہ‘‘ ہی کی جلوہ آرائی اور دین و شریعت ہی کی روشنی نظر آتی ہے۔ جیسے رمضان المبارک میں ہوتا ہے۔

رمضان میں دن کو سب مسلمان ایک ہی کیفیت میں نظر آتے ہیں۔ گھر میں ہوں تب بھی، دفتر اور کارخانے میں ہوں تب بھی، سڑکوں اور بازاروں میں ہوں تب بھی، تنہا ہوں تب بھی اور مجلس میں ہوں تب بھی، امیر ہوں تب بھی فقیر ہوں تب بھی، راعی و حکمراں ہوں تب بھی اور رعایا ہوں تب بھی۔ سب ایک ہی جذبے سے سرشار ، سب پر ایک ہی کیفیت کا غلب اور سب ایک ہی آقا کے غلام اور ایک ہی حاکم کے محکوم نظر آتے ہیں۔ پورے معاشرے اور ماحول میں یہ یکسانیت کس نے پیدا کی؟ ایک ہی جذبہ و احساس کی کار فرمائی کیوں ممکن ہوئی؟ اور سب پر ایک ہی رنگ کا غلبہ کیوں اور کیسے ہوا؟

یہ سب کچھ اللہ تعالیٰ کے خوف اور اس کی کامل بندگی و اطاعت کے جذبے سے ہوا جو رمضان المبارک میں روزوں کی وجہ سے انسانوں کے اندر پیدا ہوتا ہے، اور اللہ تعالیٰ ایک مہینے کے مسلسل روزوں کی مشق سے مسلمان معاشروں اور ملکوں میں ایسا ہی ماحول مستقل طور پر پیدا کرنا چاہتا ہے، جس میں نیکی غالب اور بدی مغلوب ہو، خیر کی کار فرمائی ہو اور شر کو رونمائی کا موقع نہ ملے، حق پر چلنے والے سرخرو ہوں اور باطل پر چلنے والے روسیاہ۔

لیکن ایسا تب ہی ہو سکتا ہے جب رمضان المبارک میں حاصل ہونے والے تقویٰ کی ہم حفاظت کریں، اس جذبے اور شعور کو زندہ رکھیں جو روزہ ہمارے اندر پیدا کرتا ہے۔ اس ایمانی پختگی کو قائم اور اس عقیدہٴ آخرت کو دل و دماغ میں ہر وقت مستحضر رکھیں جس سے روزے کی حالت میں ہم سر شار رہتے ہیں۔

لمحہٴ فکریہ اور دعوت غورو فکر:
آج ہمارے معاشرے میں صورت حال اس کے برعکس ہے، نیکی مغلوب اور بدی غالب ہے۔ شر خوب پھل پھول رہا ہے اور خیر سکڑتا اور سمٹتا جا رہا ہے، حق کی قوتیں کمزور ہو رہی ہیں اور باطل قوتیں دندنا رہی ہیں۔ حتی کہ نیکی کرنے والے منہ چھپاتے پھر رہے ہیں اور برائی کرنے والے ڈنکے کی چوٹ پر خوب دھڑلے سے برائیاں کر رہے ہیں۔ حالانکہ ہم سالہا سال سے رمضان المبارک کے روزے رکھتے چلے آ رہے ہیں۔ لیکن اس کے باوجود نیکی کا عمومی ماحول نہیں بن رہا ہے، ہمارے اندر کوئی تبدیلی پیدا نہیں ہو رہی ہے اور ہم اخلاق و کردار کی اتھاہ گہرائیوں میں گرتے چلے جا رہے ہیں۔ ایسا کیوں ہے؟

اس کی وجہ صرف یہ ہے کہ ہم ایک رسم کے طور پر روزہ رکھ لیتے ہیں اور اس کی روح کو اپنے اندر جذب کرنے کی کوشش نہیں کرتے ، ایک محدود وقت کے دوران میں تو ہم کھانے پینے سے پرہیز کرتے ہیں، لیکن محرمات ابدی سے اجتناب ضروری نہیں سمجھتے۔ گویا تقویٰ کی اصل حقیقت سے ہم محروم ہی رہتے ہیں۔ اس کا نتیجہ یہ ہے کہ روزے سے ہماری ایمانی قوت میں کوئی اضافہ ہوتا ہے نہ عقیدہ آخرت کا صحیح استحضار ہی حاصل ہوتا ہے اور نہ اللہ تعالیٰ کا خوف ہی ہمارے دلوں میں راسخ ہوتا ہے۔

جب کہ برائیوں کے خلاف جہاد کرنے کے لیے ضروری ہے کہ ایمان مستحکم، آخرت پر یقین مضبوط اور اللہ تعالیٰ کا خوف عناں گیر ہو۔ جب ایسا ہو جاتا ہے تو پھر انسان نہ صرف یہ کہ خود برائی کا ارتکاب نہیں کرتا، بلکہ برائی کو ہوتا ہوا دیکھنا بھی اس کے لیے مشکل ہو جاتا ہے۔ ایمان اور تقویٰ اسی جذبہ و شعور کا نام ہے۔

آج ضرورت اسی شعوری ایمان اور حقیقی تقویٰ کی ہے جو برائی کی راہ میں سد سکندری بن جائے۔ معاشرے میں کھلم کھلا کسی کو اللہ تعالیٰ کی نا فرمانی کی جرات نہ ہو اور لوگ معصیت کا ارتکاب کرتے ہوئے اسی طرح شرم اور حجاب محسوس کریں جیسے رمضان المبارک میں سرعام کھانے پینے سے ایک روزہ دار خود بھی شرم اور حجاب محسوس کرتا ہے۔
 ·  Translate
49
Add a comment...
Have her in circles
29,173 people

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 
The month of Ramadan, the month of the Quran. The month we, In Sha Allah, increase our understanding of the Quran. We don't just recite. We understand. What is Allah saying to us? This Ramadan, we need to find out.

Via-  Prophet Muhammad (SAW), the greatest man 
54
1
mohd.nasir.Ahmad New Delhi.from. khan market's profile photoAbid Hayat's profile photo
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ” بے شک دعا ہی عبادت ہے“ (ترمذی) 

بعض لوگوں کا خیال ہے کہ ہم گناہ گار ہیں گنہگاروں کی دعا قبول نہیں ہوتی۔ یہ خیال شریعت کی رو سے بالکل غلط ہے۔ اے کاش ہم قرآن کو سمجھ کر پڑھیں تاکہ ہماری زندگیاں بدل جائیں۔ کیا شیطان سے بڑا مردود و ملعون بھی کوئی ہو سکتا ہے؟ نہیں۔ اس نے کھلم کھلا اللہ کے حکم کی نافرمانی کی اور اس کے بعد دعا کی ۔” اے اللہ مجھے قیامت تک (لوگوں کو گمراہ کرنے کی) مہلت دے ۔ تو اللہ نے اس کی پکار قبول کرکے مہلت دے دی(الحجر36:)
شیطان نے کسی نیک مقصد کے لئے دعا نہیں کی مگر پھر بھی قبول ہو گئی تو یہ سمجھنا کہ گناہ گاروں کی دعا قبول نہیں ہوتی محض شیطانی فریب و دھوکہ ہے۔ اگر کوئی شخص دعا کرتا ہے اور وقتی طور پر دعا قبول نہ ہو پھر دعا مانگنا چھوڑ دے یہ بھی غلط ہے۔کیونکہ قبولیت دعا کی تین صورتیں ہیں۔

(۱) دعا بندے کی خواہش کے مطابق فوراََ قبول ہوجاتی ہے۔ (۲) اس کے بدلے اس کی دنیاوی کوئی آفت ٹل جاتی ہے۔ (۳) یااس کی دعا آخرت کے لئے ذخیرہ کردی جاتی ہے۔ (رواہ احمد)
 ·  Translate
41
4
muhammad sajjad's profile photoTanzeela Imran's profile photoHamza Ashraf's profile photoIrum Anees's profile photo
9 comments
 
Vary good!!!! 
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 
Sometimes Allah Azza Wa Jal may take everything away from you so you may turn to Him.And sometimes Allah places certain people who let you down over and over in your life to teach you that you should never depend on anyone but Him.💭

Broken hearted friends keep this in mind.
#islam  
170
6
mohammad alam's profile photoqasir khan's profile photoNiaz Khan Jadoon's profile photodaniyal vaziry's profile photo
15 comments
 
MashAllah
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 

Subhan'Allah! So what's your excuse?

Sleep?
Work?
Time?

May Allah enable those who are don't observe Salah to become those who love observing Salah 5 times a day till death arrives. 
#islam  
213
14
Bayzeed Syed's profile photoTalha Sheraz's profile photoFaisal saim's profile photoMohammad Javed Abbas's profile photo
17 comments
 
Subhan Allah.
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 

May Allah rectify the affairs of Bilaad Ashaam and bring them victory over the oppressors.
#Palestine #Syria
Ya Allah have mercy on our innocent children Ameen. #Gaza
139
21
haseeb hassan's profile photoiqbal mohd's profile photoImtiaz Khan's profile photoAlluringPrince Syed's profile photo
43 comments
 
Hum Ameen ke sewa koch bhi nahai bol sakti Muslim mardo me aj gherat chale gaye hai ye qeeyamat nahai hai to or keya hai
Add a comment...

Anam Noor

Shared publicly  - 
 
 
باب: روزہ افطار کروانے کی فضیلت،
مفہوم حدیث:
جس نے کسی روزہ دار کا روزہ افطار کروایا، اس (افطار کروانے والے) کو بھی اتنا ہی ثواب ملے گا جتنا روزہ دار کو اور روزہ دار کےثواب میں کوئی کمی بھی نہیں ہوگی
(ترمذی، حدیث# 786،
درجہ: صحیح،
کتاب الصوم، راوی:زید بن خالد رضی اللہ عنہ)‏‎.‎
 ·  Translate
63
1
Tabrez Ansari's profile photoBadar naeem's profile photoMuhammad Adnan Chamkani's profile photoHafeez Mughal's profile photo
6 comments
 
Mashallah
Add a comment...
People
Have her in circles
29,173 people
Links
YouTube
Basic Information
Gender
Female
Other names
anninoor