Profile

Cover photo
Mirza Abubakar
Works at AB Gearing
Attends MBA
Lives in pakistan
107 followers|3,851 views
AboutPostsPhotosYouTube

Stream

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
2
rachelle awotona's profile photo
 
lolzzzz
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
Thanks Dad,Regarding completing MBA
2
Mirza Abubakar's profile photoRabia Raja's profile photo
2 comments
 
yep, common people saying we just have to write so what, pen is whatever. . . and about computer yes as time being every things change people hobbies cultures values etc
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
2
Bashir Farah's profile photoMirza Abubakar's profile photoSharia Baig's profile photoAalia Khan Yousafzai's profile photo
8 comments
 
beautiful
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
manufacture transmission gear parts
1
Add a comment...
Have him in circles
107 people
Philip Parry's profile photo
Michael Noel's profile photo
Bart Klok's profile photo

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
enjoy summer under tubewell :p Yr bohat thanda pani tha maza a gai 
1
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
with the grace of ALLAH almighty MBA complete.thanks GOD! & teachers,parents.
1
Mirza Abubakar's profile photoS.KAMRAN NASIR's profile photo
2 comments
 
thanks
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
 wonderful song, (Kabhi Mausam Hua Resham by, Abhijeet) 
tomorrow my advertisement paper @ 2:00 AM  :p 
separate updates don't combine it's  :D
1
Rizwan Saleem's profile photo
 
wah wah
exams mai b music
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
Today we attend the geo programe (awam ki adalat) with imran khan.
this is my 1st experience to attend talk show. and this is our honor to invite our university most senior badge.
1
sweeza de la cruz's profile photo邵柘藤's profile photoMirza Abubakar's profile photo
7 comments
 
I can't see TV... :-(
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
ممکن ہے آپ کی آنکھ میں ٹیڑھ ہو اور اس بندے میں ٹیڑھ نہ ہو - ایک واقعہ اس حوالے سے مجھے نہیں بھولتا جب ہم سمن آباد میں رہتے تھے - یہ لاہور میں ایک جگہ ہے - وہ ان دنوں نیا نیا آباد ہو رہا تھا اچھا پوش علاقہ تھا -

وہاں ایکی بیبی بہت خوبصورت ، ماڈرن قسم کی بیوہ عورت ، نو عمر وہاں آ کر رہنے لگی - اس کے دو بچے بھی تھے -
ہم جو سمن آباد کے "نیک " آدمی تھے - ہم نے دیکھا کہ ایک عجیب و غریب کردار آکر ہمارے درمیان آباد ہو گیا ہے - اور اس کا انداز زیست ہم سے ملتا جلتا نہیں ہے -

ایک تو وہ انتہائی اعلا درجے کے خوبصورت کپڑے پہنتی تھی ، پھر اس کی یہ خرابی تھی کہ وہ بڑی خوبصورت تھی -
تیسری اس میں خرابی یہ تھی کہ اس کے گھر کے آگے سے گزرو تو خوشبو کی لپٹیں آتیں تھیں -
اس کے جو دو بچے تھے وہ گھر سے باہر بھاگتے پھرتے تھے ، اور کھانا گھر پر نہیں کھاتے تھے - لوگوں کے گھروں میں چلے جاتے اور جن گھروں میں جاتے وہیں سے کھا پی لیتے - یعنی گھر کی زندگی سے ان بچوں کی زندگی کچھ کٹ آف تھی -

اس خاتون کو کچھ عجیب و غریب قسم کے مرد بھی ملنے آتے تھے - گھر کی گاڑی کا نمبر تو روز دیکھ دیکھ کر آپ جان جاتے ہیں - لیکن اس کے گھر آئے روز مختلف نمبروں والی گاڑیاں آتیں تھیں -
ظاہر ہے اس صورتحال میں ہم جیسے بھلے آدمی اس سے کوئی اچھا نتیجہ نہیں اخذ کر سکتے -

اس کے بارے میں ہمارا ایسا ہی رویہ تھا ، جیسا آپ کو جب میں یہ کہانی سنا رہا ہوں ، تو آپ کے دل میں لا محالہ اس جیسے ہی خیالات آتے ہونگے -
ہمارے گھروں میں آپس میں چہ میگوئیاں ہوتی تھیں کہ یہ کون آ کر ہمارے محلے میں آباد ہو گئی ہے -

میں کھڑکی سے اسے جب بھی دیکھتا ، وہ جاسوسی ناول پڑھتی رہتی تھی - کوئی کام نہیں کرتی تھی - اسے کسی چولہے چوکے کا کوئی خیال نہ تھا - بچوں کو بھی کئے بار باہر نکل جانے کو کہتی تھی -

ایک روز وہ سبزی کی دکان پر گر گئی ، لوگوں نے اس کے چہرے پر پانی کے چھینٹے وینٹے مارے تو اسے ہوش آیا اور وہ گھر گئی -

تین دن کے بعد وہ فوت ہوگئی ، حالانکہ اچھی صحت مند دکھائی پڑتی تھی -
جو بندے اس کے ہاں آتے تھے - انھوں نے ہی اس کے کفن دفن کا سامان کیا - بعد میں پتا چلا کے ان کے ہاں آنے والا ایک بندہ ان کا فیملی ڈاکٹر تھا -
اس عورت کو ایک ایسی بیماری تھی جس کا کوئی علاج نہیں تھا -
اس کو کینسر کی ایسی خوفناک صورت لاحق تھی skin وغیرہ کی کہ اس کے بدن سے بدبو بھی آتی رہتی تھی -
جس پر زخم ایسے تھے اور اسے خوشبو کے لئے اسپرے کرنا پڑتا تھا ، تا کہ کسی قریب کھڑے کو تکلیف نہ ہو -
اس کا لباس اس لئے ہلکا ہوتا تھا اور غالباً ایسا تھا جو بدن کو نہ چبھے -

دوسرا اس کے گھر آنے والا وکیل تھا ، جو اس کے حقوق کی نگہبانی کرتا تھا -
تیسرا اس کے خاوند کا چھوٹا بھائی تھا ، جو اپنی بھابھی کو ملنے آتا تھا -

ہم نے ایسے ہی اس کے بارے میں طرح طرح کے اندازے لگا لیے اور نتائج اخذ کر لیے اور اس نیک پاکدامن عورت کو جب دورہ پڑتا تھا ، تو وہ بچوں کو دھکے مار کر گھر سے نکال دیتی تھی اور تڑپنے کے لیے وہ اپنے دروازے بند کر لیتی تھی -

میرا یہ سب کچھ عرض کرنے کا مقصد یہ تھا کہ ہم تنقید اور نقص نکالنے کا کام الله پر چھوڑ دیں وہ جانے اور اس کا کام جانے -
ہم الله کا بوجھ اپنے کندھوں پر نہ اٹھائیں ، کیونکہ اس کا بوجھ اٹھانے سے آدمی سارے کا سارا "چبہ" ہو جاتا ہے ، کمزور ہو جاتا ہے ، مر جاتا ہے -

الله تعالیٰ آپ کو آسانیاں عطا فرمائے اور آسانیاں تقسیم کرنے کا شرف بخشے آمین


از اشفاق احمد زاویہ ٢ تنقید اور تائی کا فلسفہ صفحہ ٦٧
 ·  Translate
1
Rizwan Saleem's profile photoMirza Abubakar's profile photo
2 comments
 
thanks !
Add a comment...

Mirza Abubakar

Shared publicly  - 
 
manufacture transmission gear parts
1
Mirza Abubakar's profile photoS.KAMRAN NASIR's profile photo
4 comments
 
i was created it. this is link, https://plus.google.com/106661503353170930600/posts
i hope you follow and recommend it to other also.
Add a comment...
People
Have him in circles
107 people
Philip Parry's profile photo
Michael Noel's profile photo
Bart Klok's profile photo
Work
Occupation
manufacture transmission gear parts,
Employment
  • AB Gearing
    marketing, present
Places
Map of the places this user has livedMap of the places this user has livedMap of the places this user has lived
Currently
pakistan
Previously
islamabad
Contact Information
Work
Email
Story
Introduction

mYsteRy


Education
  • MBA
    marketing, 2010 - present
  • PCC guj (pak)
Basic Information
Gender
Male
Looking for
Networking
Birthday
August 4
Other names
Mirza Abu Bakar
Links
Contributor to