Profile cover photo
Profile photo
Muhammad Arfan
About
Posts

Post has shared content
۔ آذان کی آواز آئے یا نہ آئے وقت پر نمازی آجاتا ہے۔ جس نے مسجد میں نہیں آنا، نہیں آئے گا خواہ مسجد کے پڑوس میں رہتا ہو۔ آزمائش شرط، مسجد میں جمع ہونے کے اصل مقصد اجتماحی فلاح پر عمل کرنا شروع کردیں، بغیر اسپیکر کے لوگ اپنا اہم دنیاوی کام چھوڑ کر آئیں گے۔ خدا نے انسان میں غرض و لالچ کا عنصر رکھّا ہے، لازم انسانی سوچ غرض کا پیچھا کرتی ہے۔ اب اکثر لوگ مسجد کی طرف اس لیئے نہیں آتے، 1من گھڑت ملسک و تفرقہ سے نفرت۔ 2 حیّٰی الفلاح دن میں 20 دفعہْ پکارنے کے باوجود عمل نہیں کیا جاتا۔ 3 کرائے کے قاتلوں نے کمزور ایمان کو مسجد میں دہشتگردی کا خوف دے رکھا ہے۔ اگر تم نے مسجد میں فلاح پر بات نہیں کرنی تو اپنی اصلاح کیلئے میں گھر پر بھی خدا کو یاد کر سکتا ہوں۔ پھر آپ سے مجھے کیا غرض؟ 10 کے بجائے 100 اسپیکر بھی لگا لیں تو اکثریت مسجد میں نہیں ہو گی۔ جب تک تم اصل دین کی طرف نہیں آوْ گے،1 مسلک ابراہیمی۔ 2 اجتماحی فلاح پر عمل۔ وہ کونسی دنیاوی بات تھی جو مسجد نبویﷺ میں نہ ہوئی ہو۔ فنڈنگ کی حصّہ داری پر، یا کسی اِشارہ پر اسپیکر کا بہانہ بناتے ملک میں[لِسانّی جماعت کی طرح] فساد ڈالنا مطلوب ہے، تو یہ دینی خدمت نہیں بلکہ مزید آپ لوگوں کی ناکامی والا کام ہے۔
Photo

Post has attachment

Post has shared content

Post has shared content

Post has shared content
Wait while more posts are being loaded