Profile cover photo
Profile photo
mBILALm.com
333 followers -
Urdu Computing and Blogging
Urdu Computing and Blogging

333 followers
About
mBILALm.com's posts

Post has attachment
جاندار کی آنکھ ہو یا پھر کیمرے کی آنکھ، دونوں روشنی کی مدد سے چیزوں کو دیکھتی ہیں۔ جس طرح ضرورت سے کم یا زیادہ روشنی میں جاندار کی آنکھ کی پتلی پھیل یا سکڑ کر روشنی کی شدت کو قابو کرتے ہوئے پردۂ چشم پر مناسب عکس بناتی ہے۔ بالکل ایسے ہی کیمرے میں لینز کے سوراخ یعنی اپرچر کو بڑا یا چھوٹا کر کے مناسب عکس بنایا جاتا ہے۔ کیمرے میں اپرچر کے ساتھ ساتھ شٹر اور آئی ایس او سے بھی روشنی کی شدت یعنی ایکسپوژر کنٹرول کیا جاتا ہے۔
فوٹوگرافر بننے کے لئے ایکسپوژر، شٹر، اپرچر اور آئی ایس او کی تفصیلی سمجھ بہت ضروری ہے، کیونکہ فوٹوگرافی کی دنیا انہیں چیزوں کے گرد ہی گھومتی ہے۔ کیمرہ سیکھنے، اچھی فوٹوگرافی کرنے اور نئے لوگوں کی آسانی کے لئے اس تحریر میں←مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/exposure-in-photography-shutter-aperture-and-iso/

#photography , #photographer , #DigitalCamera , #DSLR , #Urdu , #فوٹوگرافی , #کیمرہ , #فوٹوگرافر , #کیمرے , #تصویرکشی

Post has attachment
ڈیجیٹل کیمروں کی اقسام
بٹن دباؤ تصویر بناؤ، منظر تاڑو شٹر مارو، یہ کام مشہورِ زمانہ ”تاڑومارو“ کیمرے یعنی پوائنٹ اینڈ شوٹ سے ہوتا ہے۔ :-) جوشیلے کیمروں کی طرح ان کا شمار بھی چھوٹے کیمروں میں ہی ہوتا ہے۔ ان سے اوپر سپرزوم کیمروں کا نمبر آتا ہے اور پھر لینز تبدیل ہونے والے کیمرے سب سے اچھے ہوتے ہیں۔ ڈی ایس ایل آر کیمرے فوٹوگرافی کی دنیا کے بے تاج بادشاہ اور ہر فن مولا ہیں اور ان کا شمار لینز تبدیل ہونے والے کیمروں میں ہوتا ہے۔
کیمرہ خریدنے سے پہلے اور پھر اچھی فوٹوگرافی کے لئے ضروری ہے کہ ڈیجیٹل کیمروں کی اقسام اور ان کے فنکشنز کی مکمل معلومات ہو۔ ابھی ہم انہیں باتوں کی تفصیل دیکھتے ہیں، جس سے کیمرہ خریدنے اور اچھی فوٹوگرافی کرنے←مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/types-of-digital-cameras/


#photography , #photographer , #DigitalCamera , #DSLR , #Urdu , #فوٹوگرافی , #کیمرہ , #فوٹوگرافر , #کیمرے , #تصویرکشی

Post has attachment
ڈیجیٹل کیمرہ خریدنے کی راہنمائی
موبائل میں کیمرہ آنے کی وجہ سے ہر کوئی فوٹوگرافر بن چکا ہے۔ بعض لوگ بڑی زبردست تصاویر بناتے ہیں، جبکہ بعض تو کیمرے کو اذیت ہی دیتے ہیں اور بیچارہ کیمرہ بھی سوچتا ہے کہ کہاں پھنس گیا۔ :-) کئی لوگ تصویر میں تخلیق یا فنکاری دیکھانے کی بجائے بے تکی تصویروں پر تصویریں بناتے چلے جاتے ہیں۔ میرے خیال میں اس طرح ”دے تصویر پر تصویر“ یعنی بغیر موضوع کے فوٹوگرافی کو تصویر کشی کی بجائے ”تصویر زنی“ کہنا زیادہ بہتر ہے۔ :-)
بہرحال اچھا فوٹوگرافر بننے، فوٹوگرافی کی دنیا میں آگے بڑھنے اور تصویروں میں حقیقی رنگ بھرنے کے لئے یہ سلسلہ شروع کیا ہے، تاکہ کچھ آپ اور کچھ ہم سیکھیں اور دنیا کو ایک نئے انداز سے دیکھیں۔ اس سلسلے میں اچھی فوٹوگرافی کرنے اور کیمروں کے متعلق تفصیلی باتیں زیرِبحث لائیں گے۔ ابھی اس تحریر میں کیمرہ خریدنے کی تفصیلی معلومات اور←مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/digital-camera-buying-guide/

Post has attachment
ہمارے بچپن کے رمضان المبارک

ہاں تو دوستو! بھلے زمانے کی بات ہے کہ خلیل میاں فاختہ اڑایا کرتے تھے اور تب میڈیا پر ”رمضانی ٹرانسمیشن“ نہیں ہوتی تھی۔ روزہ کشائی کی بجائے افطاری ہوا کرتی تھی۔ ویسے ہم کوئی ”انیس سو پتھر“ کے زمانے کے بھی نہیں اور نہ ہی قائم علی شاہ صاحب ہمارے ہم جماعت تھے۔ ہمارا بچپن گزرے تو ابھی جمعہ جمعہ آٹھ دن ہوئے ہیں۔ پچھلے دس پندرہ سال میں اور کچھ تبدیل ہوا ہے یا نہیں، لیکن رمضان شروع کرنے یا ہونے پر کئی ”چن چڑھائے“ ضرور جاتے ہیں۔ بلکہ ہر کوئی اپنا اپنا چن چڑھا کر ہی رہتا ہے۔ میں بھی سوچ رہا ہوں کہ ایک چن چڑھاؤں۔۔۔
ویسے وہ بھی کیا زمانہ تھا کہ رمضان آتے ہی شیطان قید ہو جاتا اور اس کے چیلے منہ چھپاتے پھرتے۔ جبکہ اب تو چیلے چوری اور سینہ زور کے مصداق یہ کہتے ہیں کہ
کچھ شرم ہوتی ہے، کچھ حیا ہوتی ہے
ہمیں نہیں معلوم کہ وہ کیا ہوتی ہے
خیر ہمارے بچپن میں تو رمضان کی سب سے مزے کی چیز عید کارڈ اور تراویح ہوتی تھی۔ تراویح میں بچہ پارٹی خوب تفریح کیا کرتی۔ جیسا کہ ایک بچے نے حاجی صاحب کو حالتِ سجدہ میں←مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/ramzan-in-our-childhood/

Post has attachment
انٹرنیٹ پر اپنے تخلیقی مواد کی حفاظت اور چوروں کے خلاف کاروائی

انٹرنیٹ پر تخلیقی مواد کی چوری زوروشور سے جاری ہے۔ کوئی چھوٹی سی تحریر تو دور، لوگوں نے کتابوں کی کتابیں چوری کر رکھی ہیں۔ صرف یہی نہیں بلکہ ہمارے اکثر لوگ تو ”کاپی رائیٹ“ لفظ کا مطلب اور اس متعلق اخلاقیات تک نہیں جانتے۔ جب انہیں سمجھایا جائے تو الٹا چور کوتوال کو ڈانٹتا ہے۔
کاپی رائٹ تخلیق کار کو تحفظ فراہم کرتا ہے، تاکہ کوئی اس کی محنت چوری نہ کر سکے اور جس کا جو حق ہے، وہ اسے ملے۔ کسی بھی تخلیقی مواد مثلاً تحریر یا تصویر کے تخلیق ہونے کے ساتھ ہی اس پر کاپی رائیٹ خود بخود لاگو ہو جاتا ہے اور اس کے لئے کسی ادارے میں رجسٹریشن کی ضرورت نہیں ہوتی۔ کسی کا تخلیقی مواد اس کی اجازت یا ”فیئر یوز پالیسی“ کے بغیر استعمال کرنا کاپی رائٹ کی خلاف ورزی اور اخلاقی جرم ہے۔ تحاریر اور دیگر تخلیقی مواد چوری کرنے والوں کی وجہ سے تخلیق کار اور خاص طور پر لکھاری بہت پریشان ہیں۔ اب وقت آ گیا ہے کہ ہٹ دھرم چوروں کا فوری علاج اور ”آن لائن محاسبہ“ کریں۔ چوروں کی ویب سائیٹس، بلاگز اور اکاؤنٹس وغیرہ ہمیشہ کے لئے بند کروا دیں۔ اس کا طریقہ یہ ہے کہ←مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/protect-copyrights-and-stop-copyright-infringement-on-internet/

Post has attachment
میری سات سالہ اردو بلاگنگ کا آغاز کیسے ہوا
بلاگ لکھتے ہوئے آج پورے سات سال ہو گئے ہیں۔ اس دوران کبھی ایسا نہیں ہوا کہ چھ ماہ تک ایک پوسٹ بھی نہ لکھی ہو، لیکن اب کی بار حالات نے ایسا کر دیا۔ خیر آج ”بلاگ گرہ“ ہے تو کچھ ”اوٹ پٹانگ“ حاضرِخدمت ہے۔ اکثر لکھاری کہتے ہیں کہ انہیں لکھنے کا شوق بچپن سے ہے۔ لیکن میں ایسا ہرگز نہیں کہوں گا۔ کیونکہ ہمارے لکھنے کی تو بچپن میں ہی واٹ لگ گئی تھی۔ یہ تو پردیس میں وطن کی یاد نے ستایا تو ہم حادثاتی طور پر لکھاری بن بیٹھے۔ حالانکہ اپنی تو مادری زبان اردو نہ اردو سے خاص واقفیت تھی۔ بس جی! ملنگ موج میں تھا تو اردو کو اپنا لیا۔ اوپر سے شعبہ کمپیوٹر سائنس ہونے کی وجہ سے اردو اور بلاگنگ کے تکنیکی موضوعات چن بیٹھا۔ لگتا ہے کہ اب یہ سلسلہ چل نکلا ہے اور میرے لوٹنے کا وقت آ گیا ہے۔ ویسے آپس کی بات ہے کہ شعاعوں کے چکر کی بجائے ”تعویذوں“ کی وجہ سے ہماری اردو اچھی ہو گئی تھی۔ کسی کو بتانا نہیں کہ بیسویں صدی بعد از مسیح میں ہم←مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/my-seven-years-of-urdu-blogging/

Post has attachment
بوڑھی انسانیت
اس ”ہارن باز“ ہجوم کے چکر میں حالت ایسی ہو گئی کہ ہمت ہارنے لگا۔ آخر کار آنکھوں کے آگے اندھیرا چھا گیا اور میں گھٹنوں کے بل گرا۔ ساتھ ہی اک خیال آیا کہ یہ شہ سوار میدانِ جنگ میں گر رہا ہے یا پھر طفل گھٹنوں کے بل ہو رہا ہے؟ گویا میں خود پر ہنسا۔ پھر ایک آواز سنائی دی۔ ہاتھ میں گلاس پکڑے وہ میرے سامنے تھی۔ گلاس میں پانی تھا لیکن اگر زہر بھی ہوتا تو چپکے سے میرے خلق میں اتر جاتا۔ اس چُلو بھر زندگی میں محبت کا سمندر ٹھاٹھیں مار رہا تھا۔ میں نے ان کا شکریہ ادا کیا اور وہ← مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/weak-humanity/

Post has attachment
ادب، ادیب اور معاشرہ
اگر میں ادیب ہوتا تو یہ سب کسی کہانی یا افسانے کی صورت میں لکھتا۔ پھر ہر کسی کو پڑھتے ہوئے مزا بھی آتا اور میری بات بھی سب تک پہنچ جاتی۔ بہرحال بات یہ ہے کہ سائنس چیزیں بناتی ہے جبکہ ادب انسان کو ”انسان“ بناتا ہے۔ زمین کے گرد گھومتے سٹیلائیٹ کی طرح، ادیب معاشرے کے گرد گھومتا ہے۔ اپنے علم و ہنر کے ذریعے ایسے ایسے تازیانے برساتا ہے کہ لوگ سوچنے پر مجبور ہو جاتے ہیں۔ سعادت حسن منٹو کو ہی دیکھ لیں۔ ویسے کئی بیچارے لوگوں کا خیال ہے کہ منٹو نے فحش اور جنس نگاری← مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/writer-literature-and-society/

Post has attachment
ادب صاحب کی جوان لڑکیاں
اپنے جناب ادب صاحب کی دو جوان لڑکیاں ہیں۔ دونوں بہت خوبصورت ہیں اور ہمیں دونوں سے ہی محبت ہے۔ گو کہ بڑی میں محبت کوٹ کوٹ کر بھری ہے لیکن اتنی آسانی سے رومانوی نہیں ہوتی۔ جبکہ چھوٹی کے تو کیا ہی کہنے۔ قدم بعد میں اٹھاتی ہے اور رومانوں کی دنیا پہلے بساتی ہے۔ شاید اسی لئے اکثر جوان لڑکے چھوٹی پر فدا ہیں۔ ایک تو چھوٹی کی حرکتیں اور اوپر سے بھری جوانی۔ اس کے نین دل چیر دیں، بولے تو سُر بکھیرے اور چال ڈھال ایسی کہ نوجوان تو کیا بزرگ بھی← مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/young-girls-of-adab/

Post has attachment
پاکستانی پردیسی عرف مینگوز
کئی پاکستانی پردیسیوں کو ایک خاص بیماری لگی ہوئی ہے۔ ان کا کام پاکستان کی ہر چیز پر تنقید کرنا ہوتا ہے۔ میں ایسے پردیسیوں کو ”مینگوز“ کہتا ہوں۔ وہ کیا ہے کہ ہمارے مزیدار آموں کی طرح یہ بھی ایکسپورٹ ہو گئے۔ ان کا اصل سواد تو بیگانے لے گئے۔ ہمارے لئے پیچھے بس گھٹلیاں بچی ہیں، جو وقتاً فوقتاً ہمارے سروں پر برستی ہیں۔ ایک دفعہ جب مینگوز نے پاکستان میں رہنے والوں کو جاہل کہا، تو میرا میٹر گھوم گیا۔ پھر میں نے زرمبادلہ، حب الوطنی اور دیگر کئی باتوں پر کھری کھری سناتے ہوئے کہا کہ← مکمل تحریر اس لنک پر پڑھیں↓
http://www.mbilalm.com/blog/pakistani-foreigner-mangoes/
Wait while more posts are being loaded