Profile

Cover photo
Mir Zubair
133 followers|213,469 views
AboutPostsPhotosYouTube

Stream

Mir Zubair

Shared publicly  - 
 
Tour to Jagran Neelam Valley 
Drive
Tour to "Jagran, Kuttan" Neelam ValleyTour Organized by Snow-bell trekkers: Schedule:  Friday 14-02-2014  14th of Feburary at evening will leave for Muzaffar Abbad  Gujrat to Kohala Azad Kashmir at 10:00 p.m  Saturday 15-02-2014  Arrival at Kundal Shahi  Arrivat at Kutton and installing Camps  Trekking to Jagran velly, a full day pleasure,  Bonfire dinner at Kutton  Sunday  Breakfast at Kutton and Trekking to kundalshahi  KundalShahi back to Gujrat Cost per person:...
3
Sarwat Khurshid's profile photo
 
zalim insaan, 14 ko rakh lea hay koi jor date nai ccccccccccccc
Add a comment...

Mir Zubair

Shared publicly  - 
 
یونیورسٹی آف گجرات کے طالبعلم [زوہیب خاور] کا اعزاز
یونیورسٹی آف گجرات کے شعبہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے طالب علم زوہیب خاور کو سٹوڈنٹ ایکسچینج پروگرام کے تحت ریاستہائے متحدہ امریکہ میں پاکستان کی جانب سے کلچرل ایمبیسڈر مقرر کیا گیا ہے۔ وائس چانسلر یونیورسٹی آف گجرات پروفیسر ڈاکٹر محمد نظام الدین نے زوہیب خاور کو یہ گرانقدر خدمت تفویض ہونے پر دل کی گہرائیوں سے مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ ذہین اور محنتی طلباء و طالبات کسی بھی تعلیمی ادارے کی بہترین پہچان ہوتے ہیں۔ مجھے امید ہے کہ زوہیب خاور امریکہ میں بطور کلچرل ایمبیسڈراپنے قیام کے دوران ملک و قوم کے لیے بہترین خدمات سر انجام دیتے ہوئے پاکستانی ثقافت کے بہترین اور درخشاں پہلوؤں کو امریکی عوام سے روشناس کروانے میں اہم کردار ادا کریں گے اور صحیح معنوں میں یونیورسٹی آف گجرات کا نام روشن کریں گے۔ کسی بھی اچھے تعلیمی ادارے کا کام اپنے طلباء و طالبات کو نہ صرف معیاری زیور تعلیم سے آراستہ کرنا ہوتا ہے بلکہ ان کی کردار سازی اس انداز سے کرنا ہوتا ہے کہ وہ اپنی عملی زندگی میں معاشرہ کے بہترین فرد اور اپنے اپنے شعبہ جات میں انسانیت کی خدمت کے لیے صحیح معنوں میں عمل پیرا ہوں۔ یونیورسٹی آف گجرات کے اساتذہ اور انتظامیہ طلباء و طالبات کی ذہنی و فکری تربیت میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ زوہیب خاور کو امریکن ایجوکیشنل فاؤنڈیشن، انٹرنیشنل ریسرچ اینڈ ایکسچینج بورڈاور بیورو آف ایجوکیشنل و کلچرل افیئرز کی جانب سے سٹوڈنٹ ایکسچینج پروگرام کے تحت سکالر شپ پر پنسلوانیا امریکہ کی تھیل یونیورسٹی میں مدعو کیا گیا ہے۔ یہاں پر یہبات یاد رہے کہ زوہیب خاور قبل ازیں باکو، آذر بائیجان میں منعقدہ ایک بین الاقوامی یونی وژن میوزک فیسٹیول 2013 میں یونیورسٹی آف گجرات کی طرف سے پاکستان کی عالمی سطح پر نمائندگی کر چکے ہیں۔ اس میوزک فیسٹیول میں 36 ملکوں کے طلباء و طالبات نے حصہ لیا تھا۔  
 ·  Translate
8
Add a comment...

Mir Zubair

Shared publicly  - 
 
Unforgeable Memories of Final Day of the Conference.. hope every body loved it
1
Add a comment...
Have him in circles
133 people
Gulzar Ahmad's profile photo
Faizan Arshad's profile photo
Tehseen naz's profile photo
Mirza Naqash Saeed's profile photo
Rabbea Arshad's profile photo
Sarmad Iqbal's profile photo

Mir Zubair

Shared publicly  - 
 
گجرات (پ ر)یونیورسٹی آف گجرات اعلیٰ تعلیم کے فروغ کے سلسلہ میں اپنے فرائض کماحقہ پورے کر رہی ہے اور اپنے قیام کے تھوڑے ہی عرصہ میں اس یونیورسٹی نے ایک بہترین درسگاہ اور باکمال دانشگاہ ہونے کا اعزاز حاصل کر لیا ہے۔ کسی بھی معاشرہ کی سماجی، معاشرتی اور معاشی ترقی میں اعلیٰ تعلیم کا فروغ اہم کردار ادا کرتا ہے۔ محنت و عزم ہی وہ واحد کنجی ہے جو اعلیٰ تعلیم کے دروازے وا کر سکتی ہے۔ عہد حاضر میں انسانی وسائل کو باقی تمام وسائل پر فوقیت دی جاتی ہے۔ نوجوان نسل پاکستان کا وہوسرمایہ ہے جس کو اعلیٰ تعلیم کے زیور سے آراستہ کر کے ہم ملکی ترقی کی رفتار کو تیز تر بنا سکتے ہیں۔ میں آج اس کانووکیشن میں ڈگریاں حاصل کرنے والے تمام طلباء و طالبات کو مبارکباد پیش کرتا ہوں اور انہیں مشورہ دیتا ہوں کہ زندگی میں کامیابی کا واحد راز عزم و ہمت اور سچائی ہے۔ آپ اپنی عملی زندگی میں پورے خلوص اور جذبہ کے ساتھ اپنے ملک، قوم اور معاشرہ کی خدمت میں کوئی کسر نہ اٹھا رکھیں“ ان خیالات کا اظہار عزت مآب گورنر پنجاب اور چانسلر چوھدری محمد سرور نے یونیورسٹی آف گجرات کے تیسرے کانووکیشن کے شرکاء سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وائس چانسلر یونیورسٹی آف گجرات پروفیسر ڈاکٹر محمد نظام الدین نے اپنے خطبہ استقبالیہ میں کہا کہ یونیورسٹی آف گجرات نے قلیل عرصہ میں نماں کامیابیاں حاصل کی ہیں۔ ہماری کوشش ہمیشہ یہی رہی ہے کہ یہاں تعلیم پانے والے طلباء و طالبات کو عملی تربیت بھی مہیا کی جائے جو آئندہ زندگی میں ان کی مددگار ثابت ہو۔ یونیورسٹی آف گجرات کا دائرہ کار دن بدن وسیع ہو رہا ہے اور زیادہ سے زیادہ طلباء و طالبات اس یونیورسٹی کے مختلف پروگراموں میں داخل ہو رہے ہیں۔ یونیورسٹی آف گجرات اس لحاظ سے منفرد ہے کہ یہ ایک وسیع علاقہ میں اپنے طلباء و طالبات کو ٹرانسپورٹ کی سہولت مہیا کر رہی ہے تاکہ وہ سفر کی دشواریوں سے بچتے ہوئے احسن طریقہ سے اپنی پڑھائی پر توجہ دیں۔ ہمارے محنتی اور قابل اساتذہ دن رات ان کی خدمت میں کوشاں ہیں۔ ہم نے یونیورسٹی آف گجرات میں ایسے اختراعی پروگرام شروع کرنے پر توجہ دی ہے جو طلباء و طالبات کو عملی زندگی میں ملازمت حاصل کرنے میں آسانیاں مہیا کریں۔ یونیورسٹی کی ضروریات کے پیش نظر ہمیں اپنے اساتذہ بڑھانے کے علاوہ ہاسٹل اور سٹاف کی رہائشگاؤں کے لیے مزید زمین کی اشد ضرورت ہے۔ اس کے علاوہ ٹرانسپورٹ میں اضافہ بھی ناگزیر ہے۔ یونیورسٹی آف گجرات نے اپنے معیار تعلیم کو بہتر بنانے کے لیے اوکلوہاما یونیورسٹی اور یونیورسٹی آف سنٹرل لنکا شائر کے اشتراک سے بھی کچھ پروگرام شروع کیے ہیں۔ مجھے واثق امید ہے کہ حکومت پنجاب اپنی روایات کو برقرار رکھتے ہوئے یونیورسٹی آف گجرات کے انفرا سٹرکچر کو بہتر بنانے کے لیے مزید اقدامات کرے گی۔ قبل ازیں وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد نظام الدین نے اپنی ٹیم سمیت گورنر پنجاب چوھدری محمد سرور کو خوش آمدید کہا اور انہیں جلوس کی شکل میں پنڈال میں لیکر آئے۔ گونر پنجاب نے اس موقع پر یونیورسٹی آف گجرات کے طلباء و طالبات کے بنائے ہوئے فن پاروں پر مشتمل ایک نمائش کا بھی افتتاح کیا۔ یونیورسٹی آف گجرات کے تیسرے کانووکیشن کے موقع پر مختلف شعبوں میں کامیاب ہونے والے بی ایس، بی ایس آنرز، ایسوسی ایٹ ڈگری پروگرام، ایم اے اور ایم ایس سی کے 3469 طلباء و طالبات کو ڈگریاں تفویض کی گئیں۔ علاوہ ازیں گورنر پنجاب چوھدری محمد سرور نے مختلف شعبہ جات میں نمایاں کارکردگی دکھانے والے 105 طلباء و طالبات کو گولڈ میڈلوں سے نوازا۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد نظام الدین، کنٹرولر امتحانات احمد جمیل ترک اور رجسٹرار ڈاکٹر طاہر عقیل کے علاوہ چیئر مین ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان انجینئر امتیاز گیلانی بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ کانووکیشن کے موقع پر چوھدری جعفر اقبال ایم این اے،نوابزادہ مظہر علی خاں ایم این اے، حاجی عمران ظفرایم پی اے،میجر معین نواز ایم پی اے، چوہدری شبیر کوٹلہ ایم پی اے، چوھدری محمد اشرف دیونہ ایم پی اے، نوابزادہ غضنفر علی گل کے علاوہ سنڈیکیٹ ممبران اور یونیورسٹی کے ڈائریکٹران بھی سٹیج پر جلوہ افروز تھے۔ کانووکیشن میں طلباء و طالبات کی بھاری تعداد، طلباء و طالبات کے والدین، سول سوسائٹی کے اراکین، یونیورسٹی کے اساتذہ اور مختلف یونیورسٹیوں کے وائس چانسلر زنے بھی خصوصی شرکت کی۔

 ·  Translate
5
Add a comment...

Mir Zubair

Shared publicly  - 
 
Malam Jabba (also Maalam Jabba, Urdu: مالم جبہ) is a Hill Station in the Karakoram mountain range nearly 40 km from Saidu Sharif in Swat Valley, Peshawar, Pakistan. It is 314 km from Islamabad and 51 km from Saidu Sharif Airport.
Malam Jabba is home to the only ski resort in Pakistan. The area also contains two Buddhist stupas and six monasteries that are scattered around the resort. The presence of the monuments at such a height indicates that the area has been inhabited for over 2000 years.
Two trekking trails are located near the Malam Jabba resort. The first passes through the Ghorband Valley and Shangla Top and starts about 18 km from the resort. The other trail passes through the Sabonev Valley and is about 17 km from the resort

Cost per Head: 6500/-
Fill the Below Form for Further Registration
https://docs.google.com/forms/d/1yp4o8x38DUCnLZ9IOzT_Owa5Of_Y7eTqW1yEsAFu3OU/viewform


No of Days: 3
Average Trek time: 3 hours
Weather Condition: Moderate in Day & Cold at nights 
Snowfall: Expected 
Level: Beginner / Easy 
- 17th Jan, 2014
Departure from Gujrat at Evening at 7:00 pm for Malam Jabba

- 18h Jan, 2014
Reach at Morning to Malam Jabba 
Breakfast in Rest House
Rest for 3 hours 
Visit to Old Ancient two Buddhist stupas and six monasteries
Overnight Stay, Bonfire in a Syed Brothers Resort.

- 19th Jan, 2014
Hiking activity to Peak (whole day activity) 
Will leave from Malam Jabba after Hiking 


Services Included:

• Luxury Transport 
• 2 Breakfast • 2 lunches • 2 Dinners 
• Services of a guide
• Standard meals & Refreshment during the Trip. 
• Road tolls. 
• Basic first aid kit.
• Bonfire & BBQ


Services not included: 
• Medication, evacuation and rescue etc.
• Beverages & phone calls or other expenses 
• Extra expenses due to road blocks or other reason.
• Porter Charges to Carry Personal Items.
• Anything not mentioned above.

Contact Person: 
Zubair Amanat 
03006254563

Mir Abdul Jabbar
03009621948
03476714440
Malam Jabba
Sun, January 12, 7:00 PM GMT+5
Malam Jabba

2
Mir Zubair's profile photoardashir baluch's profile photo
2 comments
 
When ever you Want Brother.. Make a plan i had lot beautiful places to wow you .. :) 
Add a comment...

Mir Zubair

Shared publicly  - 
3
1
Fouzia Rana's profile photo
Add a comment...

Mir Zubair

Shared publicly  - 
 
A seminar on “Fall of Dhaka, December 16, 2013: Revisited” was held in the University of Gujrat (UoG) organized by Department of History & Pakistan Studies. Dr Tahir Aqil, Registrar UoG presided the seminar as Chief Guest. Prof Dr Muhammad Faheem Malik, Director Academics, Faculty Members of different departments and a large number of students attended this seminar. Dr Tahir Aqil Registrar UoG said, “Behavior plays an important role in the fate of nations and this has been proved in 1971 at the time of breakup of Pakistan. Tolerance is the best way for the survival and unity of a nation. Fall of Dhaka should be remembered as the black day in the history of Pakistan. Pakistan had to lose its important territory on that day. We should have to analyze all those events in an historical perspective for making our future better. We have learnt nothing from our past as a nation. There is discrimination on different levels in Pakistan. Injustice creates doubt. Division of sources is necessary for the survival of Pakistan and its prosperity as a nation.” Prof Dr Javed Haider Syed, HoD Dept. of History, while addressing as a keynote speaker of this seminar, presented an analysis of the comprehensive history of Pakistan Movement which led to the breakup of united Pakistan in 1971. He said, “Bengali people were neglected throughout the history of Pakistan. Bengali Muslims were pioneers of Freedom Movement. They were far more advanced culturally and intellectually. The history of freedom movement has been distorted in our history text books. East Pakistanis were patriotic to Pakistan. Their leadership was humble, dedicated, moderate, lenient and gentle. East Pakistan was a fertile land. East Pakistanis had a lot of grievances against the central government because of its policies. They were not given due share in the power and services of Pakistan. All those factors led to the breakup of Pakistan in 1971.” Shaikh Abdul Rashid, Director Media & Publications UoG said, “Research is essential to analyze historical events logically. History is tyrant and it does not forgive the mistakes of nations. Fall of Dhaka reminds us for awakening of our national conscience. We are standing at the same point. We have not made a sense of loss till yet. Breakup of Pakistan was a trauma for Pakistani nation.” Prof Dr Sohail Imam, Faculty Member of Dept. of Psychology remembering those sad days of 1971 said, “The memoirs of breakup of Pakistan and fall of Dhaka are panic-stricken and terrified. The central government of Pakistan devised such policies after the creation of Pakistan which increased the sense of deprivation of East Pakistanis. They began to feel themselves as aliens. Personal interests have become more powerful than national interests in today Pakistan as those were at the time of breakup of Pakistan. It is time to review our policies. Otherwise the results will not be helpful.” The students raised some thought provoking questions in the scenario of breakup of Pakistan. Madam Javairia Masood, Associate Lecturer of Dept. of History performed as the stage secretary of this seminar. Miss Ummara Noreen, a student presented a poem by Faiz Ahmad Faiz on the sad memoirs of fall of Dhaka. The seminar was started with the recitation of verses from the Holy Quran by Saddam Hussain and Naat by Tayyaba Shahzad. 
3
Add a comment...
People
Have him in circles
133 people
Gulzar Ahmad's profile photo
Faizan Arshad's profile photo
Tehseen naz's profile photo
Mirza Naqash Saeed's profile photo
Rabbea Arshad's profile photo
Sarmad Iqbal's profile photo
Links
YouTube
Other profiles
Contributor to
Basic Information
Gender
Male