Profile cover photo
Profile photo
Abrar Qureshi
43 followers
43 followers
About
Abrar Qureshi's posts

Post has attachment
طفل تسلیوں سے دل بہل رہا ہے
طفل   تسلیوں    سے   دل    بہل   رہا    ہے آج    کل    سب     ٹھیک    چل    رہا    ہے پرائے     گھر     جو    لگائی     تھی    کل آج   اسی  آگ  سے  اپنا  گھر  جل  رہا  ہے واقعہ   جان  کر  فراموش  کر  رہے  جسے سانحہ ہے زمانے کی کھوکھ میں پل رہا ہے نا   ٹھیک ...

Post has attachment

Post has attachment
غزل | دعویٰ ہے گر محبت کا تو بے سبب ساتھ چلو
غبارِ آوارہ کی مانند، بے سمت منزل کی جانب میں تھک گیا ہوں چلتے چلتے، تم اب ساتھ چلو   تنہا چلو تو گلستاں میں بھی دشت سی وحشت کانٹوں کی رہگزر بھی گلزار بنے جب ساتھ چلو   اندیشہ انجام کیسا، یہ ان کہے سوال کیونکر؟ دعویٰ ہے گر محبت کا تو بے سبب ساتھ چلو   اسی ا...

Post has attachment
پنجابی نظم | پردیسی دا دکھڑا
توں مائے آکھیا سی جا پَترا دیس بگانے رب راکھا تیرا سر اُچا رکھیں، مڑ نا وکھیں فیر پاویں خیر دا پھیرا توں مائے آکھیا سی جا پَترا دیس بگانے رب راکھا تیرا جو چاہیں سو توں پائیں تینوں رب بنائے بادشاہ دکھ الم دا سایا نا ویکھیں ہوون پورے تیرے سارے چاہ پر مائے، دی...

Post has attachment
غزل | آسائشیں چھوڑ دیں اب ضرورتوں کا کیا کروں
آسائشیں چھوڑ دیں اب ضرورتوں کا کیا کروں خود بھوکا رہ بھی لوں پر بچوں کا کیا کروں میرا ضمیر سلامت، ہے نیک و بد کی خبر بھی انسان ہوں آخر، اپنی مجبوریوں کا کیا کروں تُو ہوا جو میرا ہمسفر، عزیز تر ہوا راستہ رہگزر پہ دل لگے تو منزلوں کا کیا کروں ہجراں جانگسل سہی...

Post has attachment
نظم | منظر
  زمیں پہ کچھ جچتا ہے نا آسماں کا چاند اچھا لگتا ہے ٹھہرے ہوئے پانی میں جیسے دھیرے دھیرے عکس چلتا ہے میں جب بھی تم کو سوچتا ہوں میرے ارد گرد ایسا منظر بنتا ہے میں لمحے میں ٹھہرا رہ جاتا ہوں اور لمحہ گزر جاتا ہے مجھ پہ تمھاری یاد کا حال کچھ ایسے آتا ہے میں، ...

Post has attachment
نظم | غلط فہمی
دیکھو، یہ غلط فہمی رہنے دو  کلئیر مت کرو بات کلئیر ہوگئی تو کوئی بات نہ رہے گی، یہ جو دل میں بے کلی کے بے کسی کے ولولے ہیں  برسوں انہیں پالا ہے میں نے بہت مشکل سے اپنی خواہشوں کے سانچے میں ڈھالا ہے میں نے انہیں یوں رسوا نہ کرو میرے دل کے نہاں خانوں میں رہنے...

Post has attachment
نظم | گلہ
 میں جب اُٹھ کے جانے لگا تھا  تمھارے پہلو سے ، تم نے کیوں روک نا لیا؟  ہاتھ میرا تھام کر اپنے پاس کیوں بٹھا نا لیا؟ ایسے جو چلا تو بہت دور چلا جاؤں گا، کیا تم نہیں جانتے تھے کیا تم نہیں جانتے تھے کہ تم سے الگ زندگی عجب اک بار سا ہو اجائے گی گھبرا کے زمانے ک...

Post has attachment
نظم | تھکن
‏تھک چکا ہوں تیری یاد سے آرذو کے بار سے اب مل جا مجھے یا پھر محو ہوجا قرطاسِ حیات سے! ابرار قریشی

Post has attachment
سوکھی آنکھوں سے پھر سپنے دھو.لیتا ہوں
اپنے مطلب کو ہنستا ہوں، مطلب کو رولیتا ہوں آج کا انساں ہوں، جیسا وقت ہو ویسا ہو لیتا ہوں مجھے اپنے مفاد عزیز تر ہیں لوگوں سے جو میرے حق میں ہو میں اسی کا ہو لیتا ہوں مجھ سے وابستہ لوگ میری مجبوری ہیں میرا کیا ہے، میں بھوکا بھی سو لیتا ہوں غیر وطن میں سب یاد...
Wait while more posts are being loaded