Profile

Cover photo
Waqar Ahmad
Works at DatumSquare I.T
Attended Hazara University
Lives in Islamabad, Islamabad Capital Territory, Pakistan
43 followers|3,116 views
AboutPostsPhotosVideos

Stream

Waqar Ahmad

Shared publicly  - 
 
 
تین نوجوان ملک سے باھر سفر پر جاتے ھیں اور وھاں ایک ایسی عمارت میں ٹھہرتے ھیں جو 75 منزلہ ھے.. ان کو 75 ویں منزل پر کمرہ ملتا ھے.. ان کو عمارت کی انتظامیہ باخبر کرتی ھے کہ یہاں کے نظام کے مطابق رات کے 10 بجے کے بعد لفٹ کے دروازے بند کر دیے جاتے ھیں لھذا ھر صورت آپ کوشش کیجیے کہ دس بجے سے پہلے آپ کی واپسی ممکن ھو کیونکہ اگر دروازے بند ھوجائیں تو کسی بھی کوشش کے باوجود لفٹ کھلوانا ممکن نہ ھوگا..
پہلے دن وہ تینوں سیر و سیاحت کے لیے نکلتے ھیں تو رات 10 بجے سے پہلے واپس لوٹ آتے ھیں مگر دوسرے دن وہ لیٹ ھوجاتے ھیں.. اب لفٹ کے دروازے بند ھو چکے تھے.. ان تینوں کو اب کوئی راہ نظر نہ آئی کہ کیسے اپنے کمرے تک پہنچا جائے جبکہ کمرہ 75 منزل پر ھے..
تینوں نے فیصلہ کیا کہ سیڑھیوں کے علاوہ کوئی دوسرا راستہ تو نہیں ھے تو یھاں سے ھی جانا پڑے گا..
ان میں سے ایک نے کہا.. " میرے پاس ایک تجویز ھے.. یہ سیڑھیاں ایسے چڑھتے ھوئے ھم سب تھک جائیں گے.. ایسا کرتے ھیں کہ اس طویل راستے میں ھم باری باری ایک دوسرے کو قصے سناتے ھوئے چلتے ھیں.. 25 ویں منزل تک میں کچھ قصے سناوں گا اس کے بعد باقی 25 منزل تک دوسرا ساتھی قصے سنائے گا اور پھر آخری 25 منزل تیسرا ساتھی.. اس طرح ھمیں تھکاوٹ کا زیادہ احساس نہیں ھوگا اور راستہ بھی کٹ جائے گا.. "
اس پر تینوں متفق ھوگئے..
پہلے دوست نے کہا.. " میں تمہیں لطیفے اور مذاحیہ قصے سناتا ھوں جسے تم سب بہت انجوائے کروگے.. " اب تینوں ھنسی مذاق کرتے ھوئے چلتے رھے..
جب 25 ویں منزل آگئی تو دوسرے ساتھی نے کہا.. " اب میں تمہیں قصے سناتا ھوں مگر میرے قصے سنجیدہ اور حقیقی ھونگیں.. "
اب 25 ویں منزل تک وہ سنجیدہ اور حقیقی قصے سنتے سناتے ھوئے چلتے رھے.. جب 50 ویں منزل تک پہنچے تو تیسرے ساتھی نے کہا.. " اب میں تم لوگوں کو کچھ غمگین اور دکھ بھرے قصے سناتا ھوں.. " جس پر پھر سب متفق ھوگئے اور غم بھرے قصے سنتے ھوئے باقی منزلیں بھی طے کرتے رھے..
تینوں تھک کر جب دروازے تک پہنچے تو تیسرے ساتھی نے کہا.. " میری زندگی کا سب سے بڑا غم بھرا قصہ یہ ھے کہ ھم کمرے کی چابی نیچے استقبالیہ پر ھی چھوڑ آئے ھیں.. "
یہ سن کر تینوں پر غشی طاری ھوگئی..
اگر دیکھا جائے تو ھم لوگ بھی اپنی زندگی کے 25 سال ھنسی مذاق ' کھیل کود اور لہو و لعب میں گزار دیتے ھیں.. پھر باقی کے 25 سال شادی ' بچے ' رزق کی تلاش ' نوکری جیسی سنجیدہ زندگی میں پھنسے رھتے ھیں..
اور جب اپنی زندگی کے 50 سال مکمل کر چکے ھوتے ھیں تو زندگی کے باقی آخری سال بڑھاپے کی مشکلات ' بیماریوں ' ھوسپٹلز کے چکر ' بچوں کے غم اور ایسی ھی ھزار مصیبتوں کے ساتھ گزارتے ھیں.. یھاں تک کہ جب موت کے دروازے پر پہنچتے ھیں تو ھمیں یاد آتا ھے کہ "چابی" تو ھم ساتھ لانا ھی بھول گئے..
رب کی رضامندی کی چابی..
جس کے بغیر یہ سارا سفر ھی بےمعنی اور پچھتاوے بھرا ھوگا..
اس لیے اس سے پہلے کہ آپ موت کے دروازے تک پہنچیں ' اپنی چابی حاصل کرلیں
 ·  Translate
4 comments on original post
1

Waqar Ahmad

Shared publicly  - 
 
 
ایک صاحب ایک نیم صحرائی علاقے میں گئے۔ وہ تانگہ پر سفر کر رہے تھے کہ اتنے میں آندھی کے آثار ظاھر ہوئے۔ تانگہ والے نے بتایا کہ اس علاقے میں بڑی ہولناک قسم کی آندھی آتی ہے۔ وہ اتنی تیز ہوتی ہے کہ بڑی بڑی چیزوں کو اڑا کر لیجاتی ہے، اور آثار بتا رہے ہیں کہ اسوقت اسی قسم کی آندھی آرہی ہے اسلئے آپ تانگہ سے اتر کر اپنے بچاؤ کی تدبیر کریں۔
جب آندھی آئی تو ہم ایک درخت کی طرف بڑھے تا کہ ہم اسکی آڑ میں پناہ لے سکیں۔ تانگہ والے نے ہمیں درخت کی طرف جاتے ہوئے دیکھا تو چیخ پڑا۔ اس نے کہا اس آندھی میں بڑے بڑے درخت گر جاتے ہیں، اسلئے اس موقع پر درخت کی پناہ لینا بہت خطرناک ہے۔ اس آندھی کے مقابلے میں بچاؤ کی ایک ہی صورت ہے کہ آپ کھلی زمین پر اوندھے ہو کر لیٹ جائیں۔
تانگہ والے کے کہنے پر ہم زمین پر منہ نیچے کر کے لیٹ گئے۔ آندھی آئی اور بہت سے درختوں اور ٹیلوں تک کو اڑا کر لے گئی۔ لیکن یہ سارا طوفان ہمارے اوپر سے گزرتا رہا اور زمین کی سطح پر ہم محفوظ پڑے رہے۔
آندھیوں میں کھڑے ہوئے درخت تو اکھڑ جاتے ہیں مگر زمین پر پھیلی ہوئی گھاس بدستور قائم رہتی ہے۔ آندھی سے بچاؤ کی سب سے زیادہ کامیاب تدبیر یہ ہے کہ وقتی طور پر اپنے آپ کو نیچا کر لیا جائے۔
زندگی کے طوفانوں سے بچنے کا طریقہ بھی یہی ہے کہ جب آندھی اٹھے تو وقتی طور پر اپنا آپ نیچا کرلو۔اگر اپنی انا کھڑی رکھو گے تو اکھاڑ دیے جاؤ گے. بس بقا نیچا رہنے میں ہی ہے
 ·  Translate
3 comments on original post
1

Waqar Ahmad

Shared publicly  - 
 
 
Coder’s childhood : when you absolutely need free space
View original post
1

Waqar Ahmad

Shared publicly  - 
 
Getting Performance Award 
1
Have him in circles
43 people
Shahbaz Kayani's profile photo
Muhammad Faisal Shehzad's profile photo
Hamid Iqbal's profile photo
Tariq Mehmood's profile photo
Waqar Ahmed's profile photo
Imran Malik's profile photo
I'm a Developer's profile photo
mohib ullah's profile photo
Nisar Ahmed's profile photo

Waqar Ahmad

Shared publicly  - 
 
Testing for Web API, chrome tool
Postman helps you be more efficient while working with APIs. Postman is a scratch-your-own-itch project. The need for it arose…
1

Waqar Ahmad

Shared publicly  - 
 
Hi, how are you?
1

Waqar Ahmad

Shared publicly  - 
 
 
Dunia itu seperti permainan
MONOPOLY
kmu mengejar uang tapi saat pertandingan berakhir, semua itu tak ada artinya
 ·  Translate
270 comments on original post
1

Waqar Ahmad changed his profile photo.

Shared publicly  - 
2
Umer Awan's profile photoWaqar Ahmad's profile photo
4 comments
 
hahahhah yh baat tu bilkul theek ha
People
Have him in circles
43 people
Shahbaz Kayani's profile photo
Muhammad Faisal Shehzad's profile photo
Hamid Iqbal's profile photo
Tariq Mehmood's profile photo
Waqar Ahmed's profile photo
Imran Malik's profile photo
I'm a Developer's profile photo
mohib ullah's profile photo
Nisar Ahmed's profile photo
Places
Map of the places this user has livedMap of the places this user has livedMap of the places this user has lived
Currently
Islamabad, Islamabad Capital Territory, Pakistan
Previously
Mansehra
Links
Other profiles
Contributor to
Work
Occupation
BCS.Hon
Skills
ASP.net , C#/ VB.net, javascirpt, jquery, SQL server 2012,
Employment
  • DatumSquare I.T
    Software Engineer, 2014 - present
  • Netsolace
    Software Engineer, 2013 - 2014
Education
  • Hazara University
    Computer Science, 2005 - 2009
  • Abaseen College
    Computer Science, 2003 - 2005
  • Garden Plain High School
    Science, 2003
Basic Information
Gender
Male